60,157 views 230 on YTPak
274 28

Published on 12 Feb 2016 | 10 months ago

حکیم محمد طارق محمود چغتائی مجذوبی دامت برکاتہم کا درس11فروری 2016 خوشحالی کاوظیفہ
ایک لفظ آپ نے زندگی میں ہمیشہ سنا، پڑھا، لکھا،بولا، خوشحالی۔ ملک کی خوشحالی، علاقے کی خوشحالی، حلقے کی خوشحالی، انسان کی خوشحالی، خاندان کی خوشحالی، یہ علاقہ بڑا خوشحال ہے، یہ ملک بڑا خوشحال ہے یہ گھرانہ بہت خوشحال ہے۔ خوش کوعلیحدہ کرو، حال کوعلیحدہ کرو، ایسا شخص جوہرحال میں خوش ہو اسے کہتے ہیں خوشحالی۔ ایک ہے حال، ایک ہے مال۔ مال کہتے ہیں انجام کو ۔ اپنے حال میں خوش ہو، غربت کاحال خوش، تنگدستی کاحال خوش۔ اسے خوشحال کہتے ہیں۔ جس کے پاس دولت ہو، مال ہو، اقتدارہو، چیزیں ہو، حکومت ہو، خدام ہوں، بڑی موٹریں، بڑا گھرہو اورحال ہو، خوش نہ ہو، اسے خوشحال کہیں گے؟حال ہو دولت کاحال، مال کاحال، اقتدارکاحال، چیزوں کاحال، خوش نہ ہو، سکون ہی نہ ہو، چین ہی نہ ہو، زندگی کاچین لٹ چکا۔ اس دن ایک صاحب نے آکرمیرے سامنے کاغذرکھ دیاکہ بیٹی نے کاغذبھیجا ہے کہ جی آپ سے تسبیح لی، وظیفہ لیا، لیکن شادی میں تاخیر ہورہی، میں آپکی مشکورہوں، لگتا ہے رب میرے لیے کوئی خیرکافیصلہ کرے گا۔

Loading related videos...