36,334 views 467 on YTPak
91 1

Published on 14 Nov 2009 | over 7 years ago

Duniya Kisi Ke Pyar Main
Artist: Mehdi Hasan
Raag: Bhopali

دنیا کسی کے پیار میں، جنت سے کم نہیں
اک دل ربا ہے دل میں، جو حوروں سے کم نہیں

duniya kisi ke pyar main, jannat say kum nahi
ik dilruba hai dil main jo phooloon say kum nahi

tum badhshahey husn ho,husn jahan ho
jaanay wafaa ho aur muhabat ki shan ho
jalway tumharay husn kay taaroon say kum nahin

bhulay say muskarao to mooti barass parhain
palkainn udha kay theeko to kalayan bhi hunss parhain
khusboo tumhari zulff ki phooloon say kum nahin
duniya kisi ke pyar main, jannat say kum nahi

بھوپالی
بھوپالی کلیان ٹھاٹھ کا اوڈو راگ ہے۔ اسکو بھوپ کلیان بھو کہتے ہیں۔ یہ راگ شدھ کلیان اور چندر کانت سے بےحد مشابہ ہے۔

تشکیل راگ

بھوپالی میں مدھم اور نکھاد ورج ہیں؛ رکھب، گندھار اور دھیوت شدھ استعمال ہوتے ہیں۔ وادی سر گندھار ہے اور سموادی دھیوت ہوتا ہے۔ بعض افراد کے نزدیک وادی پنچھم اور سموادی کھرج، لیکن پہلی ترکیب درست اور زیادہ خوبصورت ہے
تاثر

بھوپالی گانے کا وقت رات کا پہلا پہر ہے۔ راگ بھوپالی کے تمام سروں کو کومل کر دینے سے راگ بھوپال یہ بھوپالی ٹوڈی بن جاتا ہے، جو بھیرویں ٹھاٹھ یہ ٹوڈو ٹھاٹھ سے منسوب ہے۔ راگ بھوپالی میں
تشکیل راگ

بھوپالی میں مدھم اور نکھاد ورج ہیں؛ رکھب، گندھار اور دھیوت شدھ استعمال ہوتے ہیں۔ وادی سر گندھار ہے اور سموادی دھیوت ہوتا ہے۔ بعض افراد کے نزدیک وادی پنچھم اور سموادی کھرج، لیکن پہلی ترکیب درست اور زیادہ خوبصورت ہے۔
تاثر

بھوپالی گانے کا وقت رات کا پہلا پہر ہے۔ راگ بھوپالی کے تمام سروں کو کومل کر دینے سے راگ بھوپال یہ بھوپالی ٹوڈی بن جاتا ہے، جو بھیرویں ٹھاٹھ یہ ٹوڈو ٹھاٹھ سے منسوب ہے۔ راگ بھوپالی میں

آروہی آمروہی

بھوپالی کی آروہی آمروہی درج ذیل ہے

آروہی سا رے گا پا دھا سا
آمروہی سا رے گا پا دھا سا

حوالہ جات

کنور خالد محمود، عنایت الہی ٹک، سرسنگیت۔ الجدید، لاہور؛ المنار مارکیٹ، چوک انارکلی۔ 1969ء صفہ 137۔
tauseefqau Mehdi hassan Meri pasand PTV live
Mehdi Hassan, TI, PP, HI (Urdu: مہدی حسن) is a Pakistani ghazal singer and a former playback singer for Lollywood. He is famously known as the 'King of Ghazal' (Urdu: شہنشاہِ غزل). He has ruled the Pakistan film industry along with Ahmed Rushdi.
The struggle ended when Mehdi Hassan was given the opportunity to sing on Radio Pakistan in 1957, primarily as a thumri singer, which earned him recognition within the musical fraternity. At the time, Ustad Barkat Ali Khan, Begum Akhtar and Mukhtar Begum were considered the stalwarts of ghazal gayaki.[citation needed]
He also had a passion for Urdu poetry and began to experiment by singing ghazals on a part-time basis. He cites radio officers Z.A. Bukhari and Rafiq Anwar as additional influences in his progression as a ghazal singer.

Loading related videos...