1,156,695 views 917 on YTPak
2,459 501

Published on 14 Sep 2013 | over 3 years ago

Brought too You bY Yasir Tanoli +971 55 6039256

ہائے وہ وقت جدائی کے ہمارے آنسو
گِر کے دامن پہ بنے تھے جو سِتا رے آنسو
لَعل و گُوہر کے خزانے ہیں یہ سارے آنسو
کوئی آنکھوں سے چُرا لے نہ تمہارے آنسو
اُنکی آنکھوں میں جو آئیں تو ستارے آنسو
میری آنکھوں میں اگر ہوں تو بِچارے آنسو
دامن صبر بھی ہاتھوں سے مِرے چھوٹ گیا
اب تو آ پہنچے ہیں پلکوں کے کِنارے آنسو
آپ لّلِٰہ مری فکر نہ کیجئے ہرگز
آ گئے ہیں یوں ہی بس شوق کے مارے آنسو
دو گھڑی درد نے آنکھوں میں بھی رہنے نہ دیا
ہم تو سمجھے تھے بنیں گے یہ سہارے آنسو
تُو تو کہتا تھا نہ روئیں گے کبھی تیرے لئے
آج کیوں آ گئے پلکوں کے کنارے آنسو
آج تک ہم کو قَلق ہے اسی رُسوائی کا
بہ گئے تھے جو بچھڑنے پہ ہمارے آنسو
میرے ٹھرے ہوئے اَشکوں کی حقیقت سمجھو
کررہے ہیں کسی طُوفاں کے اِشارے آنسو
آج اَشکوں پہ مِرے تم کو ہنسی آتی ہے
تم تو کہتے تھے کبھی ان کو سِتارے آنسو
اس قدر غم بھی نہ دے کُچھ نہ رہے پاس مِرے
ایسا لگتا ہے کہ بہ جائیں گے سارے آنسو
دل کے جلنے کا اگر اب بھی یہ انداز رہا
پھر تو بن جائیں گے ایک دن یہ شرارے آنسو
تم کو رِم جھِم کا نظارہ جو لگا ہے اب تک
ہم نے جلتے ہوے آنکھوں سے گزارے آنسو
میرے ہونٹوں کو تو جُنبش بھی نہ ہو گی لیکن
شِدّتِ غم سے جو گھبرا کے پُکارے آنسو
میری فریاد سنی ہے نہ وہ دل موم ہوا
یوں ہی بہ بہ کے مرے آج یہ ہارے آنسو
ان کویاسر کبھی آنکھوں سے نہ گرنے دینا
میری آنکھوں میں انھیں لگتے ہیں پیارے آنسو
یاسر

Loading related videos...