98,282 views 782 on YTPak
176 13

Published on 28 May 2009 | over 7 years ago

Urdu poem adapted for children from Ralph Waldo Emerson in the early twentieth century and included in Baang-i-Dara (The Call of the Marching Bell; 1924), the third book of poetry by Allama Iqbal.

This audio and animation is part of Mera Iqbal 1 (recommended for students of Grade 4) in a set of educational books and multimedia jointly produced by Educational Resource Development Centre (ERDC) and Iqbal Academy Pakistan in 2008.

Singer: Sumera Shehzad; Music: Khadim Husain; Animation: Syed Hasan Ashraf. Subject Consultant: Ahmed Jawaid; Supervision: Muhammad Suheyl Umar; Released in Mera Iqbal CD-1 (For students of Grade 1). Copyright Iqbal Academy Pakistan (www.allamaiqbal.com)

ايک پہا ڑ اور گلہري
(ماخوذ از ايمرسن)
(بچوں کے ليے)

کوئي پہاڑ يہ کہتا تھا اک گلہري سے
تجھے ہو شرم تو پاني ميں جا کے ڈوب مرے
ذرا سي چيز ہے ، اس پر غرور ، کيا کہنا
يہ عقل اور يہ سمجھ ، يہ شعور ، کيا کہنا!
خدا کي شان ہے ناچيز چيز بن بيٹھيں
جو بے شعور ہوں يوں باتميز بن بيٹھيں
تري بساط ہے کيا ميري شان کے آگے
زميں ہے پست مري آن بان کے آگے
جو بات مجھ ميں ہے ، تجھ کو وہ ہے نصيب کہاں
بھلا پہاڑ کہاں جانور غريب کہاں!

کہا يہ سن کے گلہري نے ، منہ سنبھال ذرا
يہ کچي باتيں ہيں دل سے انھيں نکال ذرا
جو ميں بڑي نہيں تيري طرح تو کيا پروا
نہيں ہے تو بھي تو آخر مري طرح چھوٹا
ہر ايک چيز سے پيدا خدا کي قدرت ہے
کوئي بڑا ، کوئي چھوٹا ، يہ اس کي حکمت ہے
بڑا جہان ميں تجھ کو بنا ديا اس نے
مجھے درخت پہ چڑھنا سکھا ديا اس نے
قدم اٹھانے کي طاقت نہيں ذرا تجھ ميں
نري بڑائي ہے ، خوبي ہے اور کيا تجھ ميں
جو تو بڑا ہے تو مجھ سا ہنر دکھا مجھ کو
يہ چھاليا ہي ذرا توڑ کر دکھا مجھ کو
نہيں ہے چيز نکمي کوئي زمانے ميں
کوئي برا نہيں قدرت کے کارخانے ميں

Loading related videos...